Media Office Hizb ut-Tahrir Pakistan

PR 24 10 2013


 

Thursday, 19 ZilHaj 1434 AH                             24/10/2013 CE                           No:PR13102

Press Release

Nawaz Sharif’s visit of America

Tour of America is a Betrayal of the Blood of the Thousands Martyred in Drone Attacks and Bomb Blasts

Nawaz Sharif’s tour of America is a betrayal of the blood of thousands of civilians and military personnel who have been martyred in bomb blasts organized by the American “Raymond Davis” network. In addition, for several years America has been violating Pakistan’s sovereignty through drone attacks, in which thousands of Muslims have died a horrifying death. However, the chief executive of a nuclear state did not show any sign of bravery, dignity or defiance. He went to America in order to consolidate the American Raj in Pakistan, which is built on the skulls and bones of the Muslims’ corpses. If a weak country like Venezuela, in America’s backyard, expelled American diplomats for alleged involvement in acts of sabotage to destabilize the country, then why can the political and military leadership of Pakistan, headed by Nawaz Sharif and Kayani, not adopt a strong stance against American interference?

Nawaz Sharif’s visit of America is a slave’s thanks to his masters and for what? For dumping him on the street when they had no use for him fourteen years ago. And then, when they ran out of “high-grade” traitors to secure their Raj, they desperately rummaged through the dustbin of history and brought him back! Yet having no shame, Nawaz Sharif briefed Obama regarding his progress in the so called American war on terror and received further instructions on securing America’s plan to stay permanently in the region, disguised as a limited withdrawal in 2014. And that is why after meeting Nawaz Sharif, Obama said that he “wanted to prevent security cooperation from being a source of tension between the U.S and Pakistan”.

The people of Pakistan and the sincere officers in the armed forces must know that the history of Pakistan has proven that dictatorship and democracy are both American horses, ready for any traitor as a jockey. Every dictator or democratic ruler, who comes to power, further enslaves us, politically and economically, before America. Then when we are humiliated at the hands of America through incidents like Abbotabad and Salala, these gutless traitors say to the nation that having relations with America is a necessity. Only the Khilafah will liberate Pakistan from political and economic slavery to America, through the comprehensive implementation of Islam. Only a righteous Khaleefah will order American diplomats, military and private military personnel to leave the country, close down the American embassy, consulates and bases, and end the American Raj. Therefore, sincere officers in the armed forces must come forward and give Nussrah (Material Support) to Hizb ut-Tahrir for the return of Khilafah to Pakistan and attain the pleasure of their Lord Allah سبحانہ و تعالٰیin this world and in the hereafter

Shahzad Shaikh

Deputy Spokesman of Hizb ut-Tahrir in Wilayah Pakistan



جمعرات، 19 ذی الحج، 1434ھ                            24/10/2013                              نمبر:PR13102

نوا زشریف  کا دورہ امریکہ

دورہ امریکہ ڈرون حملوں اور بم دھماکوں کے ہزاروں شہداء کے خون سے غداری ہے

نواز شریف کا دورہ امریکہ ڈرون حملوں اور ملک بھر میں ریمنڈ ڈیوس نیٹ ورک کی نگرانی میں ہونے والےبم دھماکوں میں شہید ہونے والے ہزاروںشہریوں اور فوجیوں کے خون سے غداری ہے۔ امریکہ پچھلے نو سالوں سے ڈرون حملوں کی صورت میں پاکستان کی خودمختاری کی دھجیاں اڑا رہا ہے جس میں ہزاروں شہری اذیت ناک موت کا شکار ہو چکے ہیں لیکن اس کے باوجود ایک ایٹمی قوت کے سربراہ نے کسی غیرت کا مظاہرہ نہیں کیا اورپاکستان میں امریکی راج کو مزید مضبوط کرنے کے لیے امریکہ چلا گیا ۔ اگر وینیزویلا جیسا کمزور، امریکہ کا  پڑوسی ملک، محض اپنے ملک کے اندورنی معاملات میں مداخلت کے الزام پر ایک سے زائد بار امریکی سفارت کاروں کو ملک بدر کرچکا ہے اور امریکہ اس کا کچھ بھی نہ بگاڑ سکا تو پاکستان کی سیاسی و فوجی قیادت، جن کی نمائندگی نواز شریف اور کیانی کررہے ہیں کیوں امریکہ سے تعلقات منقطع نہیں کرسکتے؟

کیانواز شریف کادورہ امریکہ ایک بار پھر  اقتدار کی کرسی پر بیٹھانے کے لیے اوبامہ کا شکریہ ادا کرنے کے علاوہ  کچھ اور مقصد رکھتا  تھا؟چودہ سال قبل جب امریکیوں نے یہ دیکھا کہ نواز شریف اب ان کے کام کا نہیں رہا  تو اسےتنہا چھوڑ دیا تھا۔ اور بھر جب پاکستان میں امریکی راج کو برقرار رکھنے کے لیے امریکہ کے پاس اعلیٰ درجے کے غداروں کی قلت ہو گئی تو نواز شریف کو تاریخ کے کوڑے دان سے نکال کر ایک بار پھر واپس لے آیا!لیکن غیرت سے نہ آشنا نواز شریف  خطے میں جاری نام نہاد دہشت گردی کے خلاف امریکی جنگ میں اپنی اب تک کی کارگزاری سے اوبامہ کو آگاہ کرنے اور 2014تک محدود انخلاء کے ڈرامے کے ذریعے خطے میں امریکہ کی مستقل موجودگی کے منصوبے کو عملی جامعہ پہنانے کے لیے مزید ہدایات وصول کرنے، واشنگٹن ،اپنے آقا کے قدموں میں پہنچ گیا ۔ اس بات کا ثبوت، کہ یہ دورہ خطے میں جاری امریکی جنگ میں پاکستان کے کردارکو جاری و ساری رکھنے کے لیے تھا، خود اوبامہ نے نواز شریف سے ملاقات کے بعد جاری ہونے والے بیان میں یہ کہا کر دیا کہ "میں پاکستان اور امریکہ کے درمیان سلامتی کے امور پر ہونے والے تعاون کے نتیجے میں پیدا ہونے والی کشیدگی کا خاتمہ چاہتا ہوں "۔

پاکستان کے عوام اور افواج میں موجود مخلص افسران کو جان لینا چاہیے کہ پاکستان کی تاریخ یہ ثابت کرتی ہے کہ آمریت اور جمہوریت دونوں ہی امریکی گھوڑے ہیں۔  ہر آنے والا آمر و جمہوری حکمران ہمیں سیاسی و معاشی لحاظ سے مزید امریکی غلامی میں مبتلا کردیتا ہے اور پھرامریکہ کے ہاتھوں سانحہ ایبٹ آباد اور سلالہ جیسے ذلت آمیز واقعات کا سامنا کرنے کے باوجود  قوم سے یہ کہتا ہے کہ امریکہ سے تعلقات ناگزیر ہیں۔صرف خلافت ہی پاکستان کو امریکہ کی سیاسی و معاشی غلامی سے اسلام کے مکمل نفاذ کے ذریعے نکالے گی ، امریکی سفارت کاروں ،فوجیوں اور نجی سیکورٹی اہلکاروں کو ملک بدر، امریکہ سفارت خانے اور قونصل خانے بنداور ملک سے امریکی راج کا خاتمہ کرے گی۔ لہٰذا افواج میں موجود مخلص افسران آگے بڑھیں اور دنیا و آخرت میں اللہ کی رضا اور خوشنودی حاصل کرنے کے لیے پاکستان میں خلافت کے قیام کو عمل میں لائیں اور حزب التحریر کو نصرۃ فراہم کریں۔

شہزاد شیخ

ولایہ پاکستان میں حزب التحریرکے ڈپٹی ترجمان


Today 2091 visitors (7299 hits) Alhamdulillah
=> Do you also want a homepage for free? Then click here! <=