Media Office Hizb ut-Tahrir Pakistan

PR 14 01 2013

Monday, 2nd of Rabi-ul-Awwal 1434H                            14/01/2013                                N0: PR13006

Governor Raj Is Not The Solution to the Quetta and Baluchistan issue

Only the Khilafah Can Provide Complete Security to Each and Every Citizen

The insensitivity and coldness shown by Zardari and Kayani government over the Quetta bomb blasts, in which dozens of people were killed, has once again proved that the traitors within the political and military leadership have no concern over the security of the people. In the last year alone, thousands of people were killed in Karachi and Quetta, but the rulers patronized the politics of division, whilst the people were forced to bury their beloved ones in graves. The government was forced to apply Governor Raj (direct rule by the governor) in Baluchistan after sever resentment over Quetta killings across the country. However. Governor Raj can never deliver permanent security and peace to the citizens in Baluchistan. When Zardari remains in power because of an American backed NRO agreement and Kayani was appointed as head of the armed forces only after giving a successful “job interview” to the Deputy Secretary of State, John Negroponte at the time of Musharaf's departure nothing will change. Both of them provide opportunity to American and other foreign agencies to roam freely across the country. They arranged safe passage to Raymond Davis who killed Pakistanis. So, no mere administrative measures can change the situation of Quetta, Baluchistan and Pakistan. The main reason of this situation is that traitors like Zaradri and Kayani are in the political and military leadership and govern by democracy, which is alien to Islam. Recently the statement of Pakistan's Defense Secretary confirming that American and British agencies work in the country, is an acceptance that the rulers have no concern regarding the security of the state. Similarly, the statement of Sindh DIG (Deputy Inspector General of police) in the Supreme Court confirming that a police officer is patronizing criminal activities in Karachi, once again confirms that just like dictators who come to power in the name of national interest, the so-called democratic rulers that come to power in the name the people have no regard for either the interests of the country or the well-being of the people. Sixty five years of Pakistani history is evidence enough that whether its democracy or dictatorship, every ruler used the power of legislation to allow the enemies, America and Britain, to infiltrate in the country, and plunder the wealth of the people, further weakening  Pakistan in order to remain in American slavery. The history of Pakistan proves that always in both democracy and dictatorship the interests of America, rulers and their political allies are put above the interests of the people of Pakistan. The history of Pakistan proves that in democracy and dictatorship, people are humiliated and the country is plunged into economic misery and foreign policy humiliation. And this happens because both democracy and dictatorship provides the power of legislation to the rulers and so this power has always been used to protect American and traitor rulers interests. This is why America welcomes the support both democratic and dictator rulers.

The establishment of Khilafah in Pakistan is the only solution to escape from this miserable situation. The Khilafah is the system of ruling based on the Quran and the Sunnah, in which Khalifah is bound to only implement Quran and Sunnah. The implementation of Quran and Sunnah in the Khilafah ensures the security and well-being of every citizen regardless of their color, gender, race, religion or sect. Hizb ut-Tahrir appeals to the people of Pakistan that they must turn their backs upon the false promises and assurances of the traitor rulers present in the political and military leadership, and their man-made systems. They must instead join the struggle for the establishment of Khilafah. Hizb ut-Tahrir asks the sincere officers of armed forces for how long will they see the slaughter of their brothers and sisters? It is vital that you remove the traitors in the political and military leadership and provide Nussrah to Hizb ut-Tahrir for the establishment of Khilafah.

Shahzad Shaikh

Deputy to the official spokesman of Hizb ut-Tahrir in Pakistan

پیر2  ربیع الاول، 1434ھ                                                   14/01/2013                                نمبر:PR13006

گورنر راج کوئٹہ و بلوچستان کے مسئلے کا حل نہیں

صرف خلافت ہی ہر شہری کو مکمل تحفظ فراہم کر سکتی ہے

کوئٹہ میں ہونے والے بم دھماکوں کے نتیجے میں سینکڑوں افراد کی ہلاکت پر زرداری و کیانی کی حکومت نے جس بے حسی اور سرد مہری کا مظاہرہ کیا ہے اس سے یہ بات ایک بار پھر ثابت ہو گئی ہے کہ سیاسی و فوجی قیادت میں موجود غداروں کو عوام کی جان و مال کے تحفظ سے کوئی سروکار نہیں ہے۔ صرف پچھلے سال کوئٹہ اور کراچی میں ہزاروں افراد قتل کر دیے گئے لیکن حکمران اپنی مفاہمت کی سیاست کو پروان چڑھاتے رہے اور عوام اپنے پیاروں کو قبروں میں اتارتے رہے۔ کوئٹہ میں ہونے والی ہلاکتوں پر شدید ردعمل سے مجبور ہو کر حکومت نے بلوچستان میں گورنر راج نافذ کر دیا ہے لیکن گورنر راج بھی بلوچستان کے ہر شہری کو مستقل امن اور تحفظ فراہم نہیں کر سکے گا۔ جب زرداری نے امریکی حمائت یافتہ N.R.O کے ذریعے اور کیانی نے مشرف کی رخصتی کے وقت امریکی نائب سیکریٹری خارجہ نیگرو پونٹے کو براہ راست انٹر ویو دینے اور پاس ہونے کے بعدافواج پاکستان کے سربراہ کا عہدہ حاصل کیا ہو اور دونوں امریکی و دیگر غیر ملکی انٹیلی جنس اداروں کو ملک میں دندنانے کی آزادی فراہم کرتے ہوں اور پاکستانیوں کے قاتل ریمنڈ ڈیوس کو حفاظت کے ساتھ پاکستان سے باہر بھجواتے ہوں تو ان کے ہوتے ہوئے کسی بھی قسم کا انتظامی حکم کوئٹہ، بلوچستان اور پاکستان کی صورتحال کو تبدیل نہیں کر سکتا۔ اس تمام تر صورتحال کی بنیادی وجہ سیاسی و فوجی قیادت میں موجود زرداری اور کیانی کی شکل میں موجود غدار اور جمہوری نظام ہے۔ حالیہ دنوں میں سیکریٹری دفاع کا بیان کہ ملک میں امریکہ و برطانیہ کی انٹیلی جنس ایجنسیاں کام کرتی ہیں اور ہم ان کے متعلق جانتے ہیں اس حقیقت کا اعتراف ہے کہ حکمرانوں کو ملک کے تحفظ سے کوئی سروکار نہیں۔ اسی طرح سندھ کے ڈی۔آئی۔جی کا سپریم کورٹ میں بیان کہ کراچی پولیس کا ایک اہلکار کراچی میں جرائم کی سرپرستی کرتا ہے، اس بات کا ثبوت ہے کہ عوام کے نام پر آنے والے جمہوری حکمرانوں کو بھی قومی مفاد کے نام پرآنے والے فوجی آمروں کی طرح لوگوں کی جان و مال کے تحفظ اور ان کے فلاح و بہبود سے کوئی سروکار نہیں۔ پاکستان کی 65 سالہ تاریخ اس بات کی گواہ ہے کہ چاہے آمریت ہو یا جمہوریت ہر حکمران نے قانون سازی کے حق کو استعمال کرتے ہوئے اس ملک کے دشمنوں، امریکہ و برطانیہ کو ملک میں گھسنے کی اجازت دی ہے، عوام کی دولت کو لوٹا ہے، عوام کی جان و مال کے تحفظ سے کوئی سروکار نہیں رکھا اور ملک کو امریکی غلامی کے شکنجے میں جکڑنے کی کوششوں کو تقویت پہنچائی ہے۔ پاکستان کی تاریخ ثابت کرتی ہے کہ جمہوریت و آمریت دونوں نظاموں میں امریکہ، حکمرانوں اور ان کے سیاسی اتحادیوں کے مفادات ہی ہمیشہ عوام کے مفادات پر ترجیح پاتے ہیں۔ پاکستان کی تاریخ ثابت کرتی ہے کہ آمریت و جمہوریت دونوں نظاموں میں ذلت و رسوائی عوام کا مقدر بنتی ہے اور ملک مزید امریکی غلامی اور معاشی تباہی و بربادی کی دلدل میں دھنستاچلا جاتا ہے۔ اور ایسا صرف اس وجہ سے ہوتا ہے کہ آمریت اور جمہوریت حکمرانوں کو قانون سازی کا حق فراہم کرتے ہیں اور یہ حق ہمیشہ امریکہ اور غدار حکمرانوں کے مفادات کی تکمیل کے لیے استعمال ہوتا ہے اور اسی لیے امریکہ ہمیشہ آمر اور جمہوری دونوں طرح کے حکمرانوں کو خوش آمدید کہتا اور ان کی حمائت کرتا ہے۔

اس صورتحال سے نکلنے کا واحد حل پاکستان میں خلافت کا قیام ہے۔ خلافت قرآن و سنت کی بنیاد پر حکمرانی کا نظام ہے جس میں خلیفہ صرف اور صرف قرآن و سنت کو نافذ کرنے کا پابند ہوتا ہے۔ خلافت میں صرف اور صرف قرآن و سنت کے نفاذکی پابندی ریاست کے ہر شہری کی بلاتفریق رنگ، نسل، زبان، مذہب و مسلک، جان و مال اور عزت و آبرو کی حفاظت کو یقینی بناتی ہے۔ حزب التحریر پاکستان کے عوام سے مطالبہ کرتی ہے کہ سیاسی و فوجی قیادت میں موجود غداروں کے جھوٹے وعدوں اور دلاسوں اور انسانوں کے بنائے ہوئے نظاموں سے منہ موڑ کر خلافت کے قیام کی جدوجہد میں شامل ہو جائیں۔ حزب التحریر افواج پاکستان میں موجود مخلص افسران سے پوچھتی ہے کہ کب تک اپنے مسلمان بھائیوں کے قتل عام کو خاموشی سے دیکھتے رہیں گے۔ آپ پر لازم ہے کہ سیاسی و فوجی قیادت میں موجود غداروں کو ہٹائیں اور خلافت کے قیام کے لیے حزب التحریر کو نصرہ فراہم کریں۔

پاکستان میں حزب التحریر کے ڈپٹی ترجمان

شہزاد شیخ


Today 322 visitors (1819 hits) Alhamdulillah
=> Do you also want a homepage for free? Then click here! <=