Media Office Hizb ut-Tahrir Pakistan

PN 14 05 2013

Tuesday, 4th Rajab 1434H                                 14/05/2013                                N0: PN13052

Press Release

Abolish Democracy, Establish Khilafah

Kayani-Sharif regime bows before India, even before Nawaz Sharif takes the oath of office!

Prime Minister in waiting, Nawaz Sharif, has bowed in front of India, even before taking the oath of office, under the watchful eye of America’s key agent in Pakistan, Kayani. So the Kayani-Sharif regime has already proved that it is the new jockey of America’s horse in Pakistan, democracy, and is the true successor of the Musharaf-Aziz and Kayani-Zardari legacy. Talking to foreign news journalist, Nawaz Sharif extended an invitation to the Prime Minister of India, to attend his oath taking ceremony. Prior to this, Nawaz had already stated on an Indian TV channel that he will visit India, whether India invites him or not. First, the Musharraf-Aziz, then the Kayani-Zardari regime and now the Kayani-Sharif regime desire to please India consistently by any means, regardless of the humiliation. This is the result of an American policy which wants to place India in front of China, by weakening Pakistan to a submissive state before India rather than achieving its true potential as the nucleus of a global Khilafah state.

During the last decade, Indian rulers rejected arrogantly the invitation to tour Pakistan, extended by Pakistani rulers. But one after another, who ever came in to power, never dared to oppose the American policy to appease India. How humiliating it is that a Kaffir Mushrik Hindu consistently rejects offers, but the rulers of Muslim Pakistan are shameless in bowing in front of them. Does Nawaz Sharif not know that even today almost seven hundred thousand Indian forces in occupied Kashmir are killing the Muslims and dishonoring their women? Does he not consider that the pure and blessed blood of more then one hundred thousand martyrs in occupied Kashmir is of more value than having trade with India? Doe he not care that India is working to make the fertile lands of Pakistan barren, by building several dams in occupied Kashmir? Does he not consider that India, with the protection and support of America, is interfering in Baluchistan and tribal areas through Afghanistan, but the Kayani-Sharif regime is assuring him that our land will not be used against India? And just a few days back, one Pakistani prisoner was brutally killed in a jail of occupied Kashmir and India refused to provide protection to Pakistanis in India. Despite all of this, Mr. Nawaz Sharif still wants to embrace India, proving that democracy is America’s horse in Pakistan, as stated by the US Ambassador to Pakistan, Mr. Olson. And this is why the Kayani-Sharif regime will follow the footsteps of the Musharraf-Aziz and Kayani-Zardari regime. This new regime is so eager to implement American instructions, by bowing in front of India, that it has done so, even before taking Sharif has taken his oath!

O Muslims of Pakistan! Democracy always imposes and will continue to impose such type of disgraceful rulers who do not care about the interests of their people, or their dignity and honor. Democracy allows rulers to have regard and value only for America and the enemy kuffar. You must arise to abolish democracy and become part of Hizb ut-Tahrir’s work for the establishment of Khilafah under its Ameer, Shaikh Ata Bin Khalil Abu Ar-Rashta. O sincere officers in the armed forces! Give Nusrah to Hizb ut-Tahrir for the establishment of Khilafah and revive your thousand years of great history in this region.

Shahzad Shaikh

Deputy to the official spokesman of Hizb ut-Tahrir in Pakistan

 

منگل، 4 رجب ، 1434ھ                                                    14/05/2013                                نمبر:PN13052

جمہوریت کو ختم کرو اور خلافت کو قائم کرو

نواز شریف کے حلف اٹھانے سے قبل ہی کیانی و شریف انتظامیہ نے بھارت کے سامنے گھٹنے ٹیک دیے

متوقع وزیر اعظم نواز شریف نے، پاکستان میں امریکہ کے وفادار ایجنٹ کیانی کی نگرانی میں، وزارت عظمی کا حلف اٹھانے سے قبل ہی بھارت کے سامنے گھٹنے ٹیک دیے ہیں۔ لہذا کیانی اور نواز شریف انتظامیہ نے خود کو پاکستان میں جمہوریت کے امریکی گھوڑے کا نیا سوار اور مشرف اور شوکت عزیز اور کیانی و زرداری کا وارث ثابت کر دیا ہے۔ غیر ملکی میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے نواز شریف نے بھارتی وزیر اعظم کو اپنی حلف برداری کی تقریب میں شرکت کی دعوت دی جبکہ اس سے قبل ایک بھارتی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے نواز شریف یہ کہہ چکا ہے کہ اگر بھارت نے اسے دورے کی دعوت نہ بھی دی تب بھی وہ بھارت کا دورہ کرے گا۔ پہلے مشرف اور شوکت عزیز اور پھر کیا نی و زرداری اور اب کیانی و نواز شریف انتظامیہ کا کسی بھی طریقے سے، چاہے وہ کتنا ہی شرمناک کیوں نہ ہو، بھارت کو مسلسل رام کرنے کی کوشش کرتے رہنا دراصل اس امریکی پالیسی کا نتیجہ ہے جس کے تحت امریکہ خطے میں بھارت کو چین کے خلاف کھڑا کرنے کے لیے پاکستان کو کمزور کر کے بھارت کا اطاعت گزار چیلا بنانا چاہتا ہے۔

پچھلی ایک دہائی میں بھارتی حکمرانوں نے رعونت کے ساتھ پاکستان کے حکمرانوں کی جانب سے پاکستان کے دورے کی دعوت کو ٹھکرایا ہے لیکن ایک کے بعد ہر دوسرے آنے والے حکمران نے بھارت کو راضی کرنے اور راضی رکھنے کی امریکی پالیسی سے روگردانی کرنے کی جرأت نہیں کی۔ کس قدر شرم کا مقام ہے کہ کافر مشرک ہندو مسلسل دھتکار رہے ہیں اور پاکستان کے مسلم حکمران بے شرمی اور بے غیرتی کا مظاہری کرتے ہوئے ان کے سامنے جھکے جا رہے ہیں۔ کیا نواز شریف یہ بھول گیا ہے کہ آج بھی مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی سات لاکھ فوج کشمیری مسلمانوں کو قتل اور ان کی عورتوں کی بے حرمتی کر رہی ہے۔ کیا ایک لاکھ سے زائد کشمیری مسلمانوں کا خون بھارت سے تجارت کے مقابلے میں اس قدر سستا ہے کہ اسے بھلا دیا جائے؟ کیا بھارت مقبوضہ کشمیر میں متعدد ڈیم بنا کر پاکستان کو بنجر کرنے کے منصوبے پر تیزی سے عمل نہیں کر رہا؟ کیا بھارت امریکی آشیر باد سے افغانستان میں بیٹھ کر بلوچستان اور پاکستان کے قبائلی علاقوں میں مداخلت نہیں کر رہا لیکن اس کے باوجود کیانی و شریف انتظامیہ بھارت کے خلاف اپنی سرزمین کو استعمال نہ کرنے کی یقین دہانی کرا رہی ہے؟ اور ابھی چند دن قبل ہی کس بے دردی سے ایک پاکستانی قیدی کو مقبوضہ کشمیر کی جیل میں قتل کر دیا گیا اور بھارت نے بھارت میں پاکستانیوں کو تحفظ فراہم کرنے سے انکار کر دیا۔ اگر ان تمام تر باتوں کے باوجود بھی نواز شریف کو بھارت سے عشق و محبت کی داستان رقم کرنے کا اتنا ہی شوق ہے تواس سے پاکستان میں امریکی سفیر اولسن کا یہ بیان درست ثابت ہوتا ہے کہ "جمہوریت درحقیقت پاکستان میں امریکی گھوڑا ہے" اور اسی لیے کیانی و شریف انتظامیہ مشرف و شوکت عزیز اور کیانی و زرداری انتظامیہ کی پیروی کرے گی۔ یہ نئی حکومت امریکی ہدایات کو نافذ کرنے کی اتنی خواہش مند ہے کہ حلف اٹھانے سے قبل ہی بھارت کے سامنے گھٹنے ٹیک دیے ہیں۔

اے پاکستان کے مسلمانو! جمہوریت ایسے ہی حکمرانوں کو ہم پر مسلط کرتی ہے اور کرتی رہے گی جن کو اس ملک اور اس کے عوام کے مفاد اور عزت و غیرت سے زیادہ امریکہ اور کفار کی عزت اور مفادات عزیز ہوتے ہیں۔ اٹھو اور اس جمہوریت کے خاتمے اور خلافت کے قیام کے لیے امیر حزب التحریر شیخ عطأ بن خلیل ابو رشتہ کی قیادت میں حزب کی جدوجہد کا حصہ بن جاؤ۔ اے افواج پاکستان میں موجود مخلص افسران! اٹھو اور خلافت کے قیام کے لیے حزب التحریر کو نصرة فراہم کرو اور اس خطے میں اپنی ہزار سالہ عظیم تاریخ کا اجرأ کرو۔

پاکستان میں حزب التحریر کے ڈپٹی ترجمان

شہزاد شیخ


Today 2326 visitors (7721 hits) Alhamdulillah
=> Do you also want a homepage for free? Then click here! <=