Media Office Hizb ut-Tahrir Pakistan

PR 27 11 2014

 
Thursday, 05th Safar 1436 AH                            27/11/2014 CE                           No: PR14071

Press Release

Hizb ut-Tahrir Rejects the Claim of Arresting Two of Its Men in Lahore

Raheel-Nawaz Regime Falsely Links Hizb ut-Tahrir with Militancy

Today on 27th November 2014, some newspapers in Lahore published a report that, “Hizb ut-Tahrir has been found doing wall chalking for ISIS” and claimed two have been arrested in this connection. Hizb ut-Tahrir Wilayah Pakistan strongly rejects this false report. Neither have the two persons arrested had any link with Hizb ut-Tahrir, nor is Hizb ut-Tahrir running any campaign in favor of ISIS.   In this respect, Hizb ut-Tahrir Wilayah Pakistan draws attention towards to the following points:

1.    Hizb ut-Tahrir is an Islamic political party which follows the methodology of RasulAllah (saw) which is intellectual and political struggle, for the establishment of Rightly Guided Khilafah. Hizb ut-Tahrir considers it Haraam to employ armed struggle in order to establish the Khilafah, according to Islamic Shariah.

2.    At the moment, two of our members are in the regime’s dungeons Mr. Naveed Butt, the Official Spokesman of Hizb ut-Tahrir in Pakistan and Dr. Ismael Sheikh. Naveed Butt was abducted by government thugs on 11 May 2012 in Lahore and Ismael Sheikh was abducted on 18 April 2014 in Karachi. So far the Raheel-Nawaz regime has neither found the courage to admit their illegal holding, nor has it presented them in courts, even though these men accept that they are the members of Hizb and the people know of their intellectual and political struggle well.

3.    The allegation that Hizb ut-Tahrir is running campaign in favor of ISIS is ridiculous. Does any party in Pakistan undertake wall chalking, display posters or distribute leaflets for the benefit of another political party? Is it not strange when one considers that whenever the Hizb’s shebaab distribute leaflets, paste stickers or display placards then it is not covered sensationally in the media? However, when Hizb is falsely accused of doing wall chalking for ISIS then it becomes news of major importance.

4.    This accusation is also ridiculous as ISIS martyred a member of Hizb ut-Tahrir, Mustafah Khiyal in Allepo, Syria, this November after six months of captivity.

Alhamdulillah, the state of mind of the traitors in the political and military leadership is evidently deteriorating as the call of Hizb ut-Tahrir is growing ever stronger in Pakistan; hence they are reduced to ridiculous and absurd accusations against Hizb ut-Tahrir.

So, the Raheel-Nawaz regime has totally failed to answer Hizb’s intellectual and political arguments and so they have resorted to such lowly allegations in a pathetic attempt to create skepticism amongst the masses and the armed forces. Hizb ut-Tahrir wants to make it clear to the Raheel-Nawaz regime that with the permission of Allah their days are numbered and soon Khilafah will be established. Therefore your attempts can neither stop Hizb ut-Tahrir in its struggle, nor can you create distance between the Hizb and the people and their armed forces.

Hizb ut-Tahrir reminds the media outlets concerned that they know the Hizb’s struggle well and so should reject this sort of absurd allegation themselves for the sake of Allah (swt) and His Messenger (saw). The very least any credible media person should do is to ask the shebaab of Hizb who meet them regularly for confirmation before printing the regime’s nonsense. Hizb hopes that in the same way some newspapers published this ridiculous and absurd allegation, they will publish our rebuttal and uphold the Truth.

Shahzad Shaikh

Deputy to the Spokesman of Hizb ut-Tahrir in the Wilayah of Pakistan


منگل، 05 صفر ، 1436ھ                                 27/11/2014                              نمبرPR14071: 

حزب التحریر  لاہور میں دو ساتھیوں کی گرفتاری کی پرزور تردید کرتی ہے

راحیل-نواز حکومت حزب التحریر  کو زبردستی عسکریت پسند جماعت ثابت کرناچاہتی ہے

        27نومبر 2014 کو لاہور کے کئی اخبارات نے یہ خبر شائع کی کہ "داعش کے لئے وال چاکنگ کرنے والوں کا تعلق کلعدم حزب التحریر  سے نکلا"۔ حزب التحریر  ولایہ پاکستان اس خبر کی پرزور تردید کرتی ہے کہ گرفتار ہونے والوں کا تعلق حزب التحریر  سے ہے اور نہ ہی حزب التحریر  داعش کے حق میں وال چاکنگ یا کسی بھی قسم کی کوئی مہم چلا رہی ہے۔ اس حوالے سے حزب التحریر  ولایہ پاکستان مندرجہ ذیل باتوں کی جانب توجہ مبزول کرانا چاہتی ہے:

1.      حزب التحریر  ایک اسلامی سیاسی جماعت ہےجو خلافت راشدہ کے قیام کے لئے منہج نبوت کے مطابق یعنی سیاسی و فکری جدوجہد کرتی ہے اور اس مقصد کے حصول کے لئے عسکری جدوجہد کو اسلام کی رو سے حرام سمجھتی ہے۔

2.      اس وقت ہمارے دو اراکین حکومت کی تحویل میں ہیں ۔ ایک پاکستان میں حزب التحریر  کے ترجمان نوید بٹ جنہیں 11 مئی 2012 میں لاہور سے اور دوسرے ڈاکٹر اسماعیل شیخ جنہیں 18 اپریل 2014 کو کراچی سے حکومتی ایجنسیوں نے اغوا کیا تھا۔ راحیل-نواز حکومت کو آج کے دن تک نہ تو ان کی گرفتاری قبول کرنے کی ہمت ہوئی ہے اور نہ ہی انہیں کسی مقدمے کے حوالے سے عدالت میں پیش کیا ہے جن کا حزب التحریر  سے تعلق نہ صرف لوگ جانتے ہیں بلکہ ان کی سیاسی و فکری جدوجہد سے بھی اچھی طرح واقف ہیں۔

3.      یہ الزام اس لحاظ سے انتہائی مضحکہ خیز ہے کہ حزب التحریر  کے شباب داعش کے حق میں مہم چلا رہے ہیں۔ کیا پاکستان میں کوئی بھی جماعت کسی دوسری جماعت کے حق میں وال چاکنگ، پوسٹرنک یا لیفلٹ تقسیم کرتی ہیں؟ آخر کیا وجہ ہے کہ جب حزب التحریر  کے شباب حزب کے نام سے جاری ہونے والے پوسٹر، اسٹیکر یا لیفلٹ بانٹتے ہیں تو اس کی تو میڈیا میں اس طرح تشہیر نہیں کی جاتی لیکن داعش کی وال چاکنگ میں حزب التحریر  کو زبردستی ملوث کیا جاتا ہے اور اس کی  تشہیر بھی کی جاتی ہے۔

4.      یہ الزام اس لحاظ سے مزید مضحکہ خیز ہو جاتا ہے کہ داعش نے شام کے شہر عدلیب میں اسی مہینے حزب التحریر  کے ایک رکن مصطفیٰ خیال کو چھ مہینے اپنی قید میں رکھنے کے بعد گولی مار کر شہید  کردیا ہے۔

        الحمدللہ جیسے جیسے پاکستان میں حزب التحریر  کی دعوت پھیلتی جارہی ہے اسی قدر سیاسی و فوجی قیادت میں موجود غداروں کی دماغی حالت بھی بگڑتی جارہی ہے ورنہ وہ حزب التحریر  کو زبردستی ایک عسکریت پسند جماعت ثابت کرنے کے لئے اس قسم کا انتہائی لغو اور بیہودہ الزام نہ لگاتے۔ راحیل-نواز حکومت حزب التحریر   کی سیاسی وفکری جدوجہد کا سیاسی و فکری جواب دینے سے قاصر ہے اور اب عوام اور افواج پاکستان کو حزب التحریر  سے متنفر کرنے کے لئے اس قسم کے بچکانہ الزامات لگا رہی ہے۔ حزب التحریر  راحیل-نواز حکومت پر واضح کردینا چاہتی ہے کہ تمھارا خاتمہ اور خلافت کا قیام اللہ کے حکم سےعنقریب ہے اور تمھاری کوئی بھی کوشش حزب کو اس کی جدوجہد سے نہ تو روک سکتی اور نہ ہی عوام اور افواج پاکستان کو اس سے متنفر کرسکتی ہے۔

        حزب التحریر  میڈیا سے بھی یہ بات کہتی ہے کہ وہ حزب کی جدوجہد سے واقف ہیں لہٰذا اس قسم کے لغو الزامات کو تو انہیں خود سے ہی مسترد کردینا چاہیے اور اگر یہ نہیں کرسکتے تو تم از کم حزب کے شباب سے ہی پوچھ لیا کریں جو آپ سے ملاقاتیں کرتے رہتے ہیں۔ حزب اس بات کی امید رکھتی ہے کہ جس جس نے اس بیہودہ خبر کو شائع اور نشر کیا ہے وہ صحافتی اخلاقیات کے مطابق اب اسی طرح حزب کی تردید کو بھی شائع اور نشر کریں گے۔

شہزاد شیخ

ولایہ پاکستان میں حزب التحریر کے ڈپٹی ترجمان



Today 1855 visitors (6418 hits) Alhamdulillah
=> Do you also want a homepage for free? Then click here! <=