Media Office Hizb ut-Tahrir Pakistan

PC 13 02 2014

 

Thursday, 13 Rabi ul-Thani 1435 AH                            13/02/2014 CE                           No: PC14008

Press Conference

Head of the Central Contact Committee of Hizb ut-Tahrir in Pakistan addresses Press Conference

US Presence is the Cause of the Bombings & Chaos

Raheel-Nawaz Regime Policy for North Waziristan Will Strengthen American Mischief

The Head of the Central Contact Committee, Saad Jagranvi, of Hizb ut-Tahrir in Pakistan, addressed a press conference in Lahore today. This press conference was held to expose the Raheel-Nawaz regime's flawed and false policy regarding North Waziristan

Mr. Saad Jagranvi said that America is behind the bombings and chaos in Pakistan. Such chaos in Pakistan benefits America alone. It wants the Pakistan military to target tribal fighters, who are crossing the border with Afghanistan to fight the American occupation in Afghanistan.

Saad Jagranvi said that a full-scale military operation in North Waziristan only strengthens the American control on Afghanistan and ensures its presence. America desires to inflame the conflict in Pakistan’s tribal areas to put pressure on the militants who are present there and who are fighting in Afghanistan. By this, America aims to reduce the ability of the Afghan Taliban and to force them into a settlement with America, whereby they accept a permanent US presence in Afghanistan, in the form of military bases and private security contractors.

Saad added that as for the operations in North Waziristan themselves, America needs them now more than ever. With its economy collapsing if it has not collapsed completely already, its armed forces demoralized and steeped in cowardice, America is desperate to secure a permanent presence for itself in Afghanistan through negotiations, after a limited withdrawal. That is why it has mobilized traitors within the leadership of Pakistan to raise hue and cry for operations and negotiations. Not only does America seek to achieve a victory that it could never achieve for itself, Muslims suffer further losses for the sake of America's security, just as they suffered during previous operations.

Saad Jagranvi concluded that we will never know of peace whilst America maintains its presence amongst us. The traitors in our leadership point here and there to deceive us on behalf of their American masters, but they will never point out the root cause, which is the American presence. He said that Islam does not allow forging any agreement with an enemy state like America and it is necessary to eliminate the American presence from Pakistan, its bases, embassies, consulates and staff, because without the exclusion of U.S form the region it is very difficult to even imagine peace in the region.

Note: The complete text of this speech is also issued along with this Press note which can be viewed and downloaded from:

http://pk.tl/1ewZ

Media Office of Hizb ut-Tahrir in Wilayah Pakistan

جمعرات ، 13 ربیع الثانی ، 1435ھ                                    13/02/2014                              نمبرPC14008:

پاکستان میں حزب التحریر کی مرکزی رابطہ کمیٹی کے سربراہ کی پریس کانفرنس

خطے میں  امریکہ کی موجودگی بم دھماکوں اور انتشار کی بنیادی وجہ ہے

شمالی وزیرستان کے لیے راحیل-نواز حکومت کی پالیسی امریکی سازشوں کوکامیاب بنانے کا ذریعہ بنے گی

حزب التحریر  پاکستان کی مرکزی رابطہ کمیٹی کے سربراہ سعد جگرانوی نے لاہور میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ یہ پریس کانفرنس شمالی وزیرستان کے حوالے سے راحیل-نواز حکومت کی پُر نقص اور پُر فریب پالیسی کو بے نقاب کرنے کے لیےمنعقد گئی تھی۔

مرکزی رابطہ کمیٹی کے سربراہ سعد جگرانوی نے کہا کہ پاکستان میں بم دھماکوں  اور انتشار کوپیدا کرنے کے پیچھے امریکہ کا ہاتھ ہے۔ پاکستان میں اس قسم کی افراتفری صرف اور صرف امریکہ کے لیے فائدہ مند ہے۔ امریکہ یہ چاہتا ہے کہ پاکستان کی فوج  اُن  قبائلی جنگجوؤں کو نشانہ بنائے جو پاک افغان سرحد پار کر کے افغانستان پر قابض امریکہ کے خلاف لڑ رہے ہیں۔

سعد جگرانوی نے کہا کہ اگر حکومت نے شمالی وزیرستان میں بھر پور اور مکمل فوجی آپریشن شروع کیا تو اس کا مقصد افغانستان پر امریکی کنٹرول کو مستحکم کرنا اور اس کی موجودگی یقینی بنانا ہوگا۔ امریکہ یہ چاہتا ہے کہ پاکستان کے قبائلی علاقوں میں آگ بھڑکے تا کہ ان جنگجوؤں پر دباؤ ڈالے جو افغانستان میں امریکہ کے خلاف لڑتے ہیں۔ اس طرح امریکہ یہ مقصد حاصل کرنا چاہتا ہے کہ وہ افغان طالبان کی صلاحیت کو کمزور کردے تاکہ وہ امریکہ کے ساتھ ایک معاہدہ کرنے پر مجبور جائیں جس کے تحت طالبان افغانستان میں مستقل فوجی اڈوں  اور نجی سیکورٹی کانٹریکٹرز کی صورت میں امریکہ کی موجودگی کو تسلیم کرلیں۔انھوں نے کہا کہ جہاں تک وزیرستان میں فوجی آپریشن کا تعلق ہے تو امریکہ کو اس   کی جتنی اشد ضرورت اب ہے اس سے پہلے کبھی نہ تھی۔ معاشی لحاظ سے تباہ ہوتا ہوا  امریکہ اور اس کی  بزدل افواج کا گرتا ہوا حوصلہ  امریکہ کو اس بات پر مجبور کررہا ہے کہ وہ محدود انخلاء کے بعد افغانستان میں اپنی موجودگی کو برقرار رکھنے کے لیے مذاکرات کا سہارا لے۔ یہی وجہ ہے کہ اس نے پاکستان کی قیادت میں موجود غداروں کو متحرک کیا ہے  کہ وہ مذاکرات اور آپریشن کے متعلق خوب شور مچائیں۔ اس طرح امریکہ  افغانستان میں فتح  کا خواہش مند  ہے، ایک ایسی فتح  جو وہ خود اپنے بل بوتے پر کسی صورت حاصل نہیں کرسکتا تھا۔ لیکن امریکہ کو تحفظ فراہم کرنے کی صورت میں مسلمان مزید نقصان اٹھائیں گے جیسا کہ وہ اس سے قبل ماضی کے فوجی آپریشنز میں  اٹھاچکے ہیں۔

مرکزی رابطہ کمیٹی کے سربراہ سعد جگرانوی نے مزید کہا کہ جب تک امریکہ ہمارے درمیان موجود ہے، امن کا قیام تو دور کی بات ہم امن کا تصور بھی نہیں کرسکیں گے۔ ہماری قیادت میں موجود غدار اس صورتحال کی ذمہ داری کبھی کسی پر ڈالتےہیں  تو کبھی کسی اور  پر،   تاکہ اپنے آقا امریکہ کی خواہش پر ہمیں دھوکہ دے سکیں لیکن یہ کبھی اس بنیادی وجہ کی نشان دہی نہیں کریں گے جو کہ خطے میں امریکہ کی موجودگی  ہے۔انھوں نے کہا کہ اسلام، دشمن امریکہ کے ساتھ کسی بھی قسم کے معاہدے کی اجازت نہیں دیتا اور پاکستان سے امریکہ کی موجودگی، اس کے اڈوں ، سفارت خانے اور قونصل خانوں کا خاتمہ اور اہلکاروں کو ملک بدر کرنا  لازمی ہے کیو نکہ خطے سے امریکہ کی موجودگی کا خاتمہ کیے بغیر امن کا تصور بھی  محال ہے۔

نوٹ: اس تقریر کا مکمل متن اس پریس ریلیز کے ساتھ جاری کیا گیا ہے جس کو اس لِنک http://pk.tl/1ewZ پر دیکھا اور ڈاون لوڈ کیا جاسکتا ہے۔

ولایہ پاکستان میں حزب التحریر کا میڈیا آفس


Today 103 visitors (562 hits) Alhamdulillah
=> Do you also want a homepage for free? Then click here! <=