Media Office Hizb ut-Tahrir Pakistan

PR 15 10 2015 Syria

 Thursday, 2nd Muharram 1437                           15/10/2015 CE                           No: 1437 / 001

Press Release

Assassination of Sheikh Abu Ahmad Abdul Aziz Ayoun known as “Abu Shujaa Al Azhari”

﴿وَمَنْ يَقْتُلْ مُؤْمِنًا مُتَعَمِّدًا فَجَزَاؤُهُ جَهَنَّمُ خَالِدًا فِيهَا وَغَضِبَ اللَّهُ عَلَيْهِ وَلَعَنَهُ وَأَعَدَّ لَهُ عَذَابًا عَظِيمًا﴾

“But whoever kills a believer intentionally - his recompense is Hell, wherein he will abide eternally, and Allah has become angry with him and has cursed him and has prepared for him a great punishment.”

[Al Nisa: 93]

On Tuesday 13/10/2015, masked men assassinated Sheikh Abu Ahmad Abdul Aziz Aayoun known as “Abu Shujaa Al Azhari” on one of the roads of Masraba in Damascus Ghouta, and then they fled on a motorcycle after they made sure he was dead, according to AlQuds AlArabi Newspaper report on its website.

This assassination is part of a series of assassinations taking place on the Syrian arena, particularly in the countryside of Homs and the Eastern Ghouta, in addition to other areas, and it comes in conjunction with the fierce campaign that exposed the land of ash-Sham. To achieve to force the people of Syria to submit to political solutions and to sit at the negotiating table with the murderer of their children and the destroyer of their homes. The aim with that is to sow suspicion and discord between the fractions, and to occupy them with themselves, in addition to getting rid of the faithful and clearing the arena of them, who constitute a stumbling block to the schemes of the West and their conspiracies, and those who prepare for entry in some of the areas with truce-fire in paving the way for a political solution.

O Muslims in the land of Sham, the abode of Dar Al Islam: This pure blood will not be forgotten by the will of Allah, and will not disappear with less than the righteous Khilafah on the method of the Prophethood insha'Allah. And every attempt to pre-empt this blessed revolution will fail. And if they blow out a candle, then many other candles will come alight, and if they silence a voice of truth then there will be many voices raised who have sold themselves to Allah. So the future is for this Deen, whether they like it or not. The Almighty says:

﴿وَعَدَ اللَّهُ الَّذِينَ آَمَنُوا مِنْكُمْ وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ لَيَسْتَخْلِفَنَّهُمْ فِي الْأَرْضِ كَمَا اسْتَخْلَفَ الَّذِينَ مِنْ قَبْلِهِمْ وَلَيُمَكِّنَنَّ لَهُمْ دِينَهُمُ الَّذِي ارْتَضَى لَهُمْ وَلَيُبَدِّلَنَّهُمْ مِنْ بَعْدِ خَوْفِهِمْ أَمْنًا يَعْبُدُونَنِي لَا يُشْرِكُونَ بِي شَيْئًا وَمَنْ كَفَرَ بَعْدَ ذَلِكَ فَأُولَئِكَ هُمُ الْفَاسِقُونَ﴾

“Allah has promised those who have believed among you and done righteous deeds that He will surely grant them succession [to authority] upon the earth just as He granted it to those before them and that He will surely establish for them [therein] their religion which He has preferred for them and that He will surely substitute for them, after their fear, security, [for] they worship Me, not associating anything with Me. But whoever disbelieves after that - then those are the defiantly disobedient.” [An-Nur: 55]

We ask Allah the Almighty for the forgiveness and the mercy for Sheikh Abdul Aziz and for all the sincere ones, who offered their blood freely for the sake of Allah. We only say what satisfies our Lord,

﴿إنا لله وإنا إليه راجعون

“Indeed we belong to Allah, and indeed to Him we will return”

[Al Baqarah: 156]

Ahmad Abdul Wahab

Head of the Media Office of Hizb ut-Tahrir

In Wilayah of Syria

 

جمعرات، 02 محرم، 1437ھ                             15/10/2015                                نمبر1437 / 001 :

شیخ ابو احمد عبد العزیز عیون کا قتل جو ابو شجاع الازھری کے نام سے بھی جانے جاتے تھے

﴿وَمَنْ يَقْتُلْ مُؤْمِنًا مُتَعَمِّدًا فَجَزَاؤُهُ جَهَنَّمُ خَالِدًا فِيهَا وَغَضِبَ اللَّهُ عَلَيْهِ وَلَعَنَهُ وَأَعَدَّ لَهُ عَذَابًا عَظِيمًا﴾

"اور جو کسی مومن کو جان بوجھ کر قتل کرے گا تو اس کی سزا جہنم ہے جس میں وہ ہمیشہ رہے گا اور اللہ اس پر غضبناک ہو گا اس پر لعنت کرے گا اور اس کے لیے درد ناک عذاب تیار کر رکھا ہے"

(النساء:93)

        منگل 13 اکتوبر 2015 کو نقاب پوش حملہ آروں نے شیخ ابو احمد عبد العزیز عیون، جو ابو شجاع الازھری کے نام سے بھی جانے جاتے تھے، کو دمشق کے علاقے غوطہ میں ایک سڑک کے کنارے قتل کر دیا اورجب ان کو یقین ہو گیا کہ شیخ قتل ہوچکے تو موٹر سائیکل پر فرار ہو گئے جیسا کہ القدس العربی اخبار نے اپنے ویب سائیٹ پر خبر شائع کی ہے۔

        یہ قتل بھی شام میں ہونے والے دیگر قتل کی وارداتوں کے سلسلے کا ہی حصہ ہے خاص کر حمص کے مضافات اور الغوطہ الشرقیۃ میں؛ کچھ اور دیگر علاقوں میں بھی، یہ اس خونخوار حملے کے ضمن میں ہے جس کا سرزمین شام کو سامنا ہے۔ قتل و غارت گری کی ان وارداتوں کا مقصد اہل شام کو سیاسی حل کے سامنے جھکانا اور ان کے بچوں کے قاتل اور گھروں کو ملیامیٹ کرنے والے کے ساتھ مذاکرات کے میز پر بیٹھنے پر مجبور کرنا ہے۔ اس کا ہدف مختلف گروپوں کے درمیان شکوک وشبہات پیدا کرنا اور دراڑیں ڈالنا بھی ہے تاکہ ان کو آپس میں ہی الجھایا جائے، اس طرح مخلص لوگوں کو ٹھکانے بھی لگایا جائے گا اور میدان کو ان سے خالی کیا جائے گا کیونکہ یہی لوگ مغر ب کے منصوبوں اور سازشوں کے سامنے چٹان کی طرح کھڑے ہیں اور ان کے خلاف بھی جو جنگ بندی کی آڑ میں کچھ علاقوں میں داخل ہو کر سیاسی حل کے لیے راہ ہموار کرنا چاہتے ہیں۔

        اے اسلام کے مسکن شام کے مسلمانو! یہ پاکیزہ خون اللہ کے اذن سے ضائع نہیں ہوگا اوران کو نبوت کے طرز پر خلافت راشدہ سے کم کوئی صلہ نہیں ملے گا، انشاء اللہ۔ اس مبارک تحریک کو ناکام بنانے کی ہر کوشش ناکام ہوگی۔ اگر یہ ایک شمع کو بھجائیں گےتو کئی اور شمعیں روشن ہوں گی۔ اگر انہوں نےحق کی ایک آواز کو خاموش کیا تو بہت سی آوازیں بلند ہوں گی کیونکہ انہوں نے خود کو اللہ ہاتھوں فروخت کر دیا ہے۔ مستقبل اس دین کا ہے  چاہے انہیں اچھا لگے یا برا۔ اللہ تعالی فرماتا ہے:

﴿وَعَدَ اللَّهُ الَّذِينَ آَمَنُوا مِنْكُمْ وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ لَيَسْتَخْلِفَنَّهُمْ فِي الْأَرْضِ كَمَا اسْتَخْلَفَ الَّذِينَ مِنْ قَبْلِهِمْ وَلَيُمَكِّنَنَّ لَهُمْ دِينَهُمُ الَّذِي ارْتَضَى لَهُمْ وَلَيُبَدِّلَنَّهُمْ مِنْ بَعْدِ خَوْفِهِمْ أَمْنًا يَعْبُدُونَنِي لَا يُشْرِكُونَ بِي شَيْئًا وَمَنْ كَفَرَ بَعْدَ ذَلِكَ فَأُولَئِكَ هُمُ الْفَاسِقُونَ﴾

"اللہ نے تم میں سے ان لوگوں کے ساتھ جو ایمان لائے اور نیک اعمال کیے وعدہ کیا ہے کہ ان کو ضرور زمین میں خلافت سے نوازے گا جیسا کہ ان سے پہلے لوگوں کو خلافت سے نوازا تھا اور ان کے لیے ان کے اس دین کو مضبوط کر دے گا جس کو ان کے لیے پسند کیا ہے ان کے خوف کو امن سے بدل دے گا پھر وہ میری عبادت کریں گے اور کسی کو میرے ساتھ شریک نہیں ٹہرائیں گے اور اس کے بعد بھی جو ناشکری کرے تو وہی لوگ ہی فاسق ہیں"

(النور:55)۔

        ہم شیخ عبد العزیز کے لیے اللہ تعالیٰ سے رحمت اور مغفرت کی دعا کرتے ہیں، ان سب مخلصین کے لیے بھی جنہوں نے اللہ کی راہ میں اپنے خون کو بغیر کسی دنیاوی غرض کے بہا دیا۔ ہم وہی بات کریں گے جس سے ہمارا رب راضی ہو

﴿إنا لله وإنا إليه راجعون﴾

"ہم اللہ کے ہیں اور ہم اسی کی طرف لوٹنے والے ہیں"

(البقرۃ:156)۔

احمد عبدالوہاب

ولایہ شام میں حزب التحریر کے میڈیا آفس کے سربراہ


Today 3338 visitors (10852 hits) Alhamdulillah
=> Do you also want a homepage for free? Then click here! <=