Media Office Hizb ut-Tahrir Pakistan

PR 08 04 2014 CMO

Issue No :1435 AH /027                                     Tuesday, 08 Jamadiul II 1435 AH                                   08/04/2014 CE

Press Release

Russia Sentences Member of Hizb ut Tahrir, Abdul Kareem Tushmutov, to Prison for 17 Years

On 03/04/2014 Interfax Agency reported from the media office of the Russian Federal Security Bureau (FSB) stating, “The regional court of the city of Stavropol has sentenced a member belonging to the international terrorist organization Hizb ut Tahrir with the charge of planning attacks on the Maiskii festivities in 2013 in Stavropol. Abdul Kareem Tushmutov, who is a resident from Tajikistan, was convicted under the two Articles 205 and 30 from the first section of the Criminal Code. (For charges of terrorism, and involvement in the carrying out of crimes of terrorist nature or helping the perpetrators). He was sentenced to 17 years with hard labor, in addition to a fine of 55 thousand rubles”.

This sentence against our brother Abdul Kareem does not come as a surprise to us, because the Russian government has long been waging an open war against Islam and Muslims, using diverse horrendous and barbaric tactics. It is not a secret that the authority in Russia has complete control over the penal system in the Kremlin; so whatever laws are issued are at the request of the authority in the Kremlin, which wants to eliminate anyone who declares the truth by describing the activities of the Dawah carriers as terrorism. In the beginning of 2014, the Duma adopted the outrageous laws that criminalize any political activity, no matter how peaceful, under the pretext of alleged terrorism, and that provide for imprisonment from 15-20 years.

The only criminal responsible for terrorism in Russia is the criminal regime in the Kremlin, and the evidence for this is almost incalculable. This including, but is not limited to, what happened to our brother, who was arrested on 13 September 2011 outside of a mosque in Moscow after his performance of the ‘Isha prayer. On 29 February 2011, he was sentenced to prison for a year, simply because he spoke at the Mosque and congratulated the Muslims for the month of Ramadan.

During this year, Russian security agents visited him in prison a number of times and asked him to cooperate with them and work with them as an informer, and he firmly and resolutely refused. After his release from prison, he was called on April 16, 2013 to the immigration and passport services in the city of Stavropol under the pretext of receiving paperwork, but there he was arrested. The Russian terrorist agency fabricated charges of terrorist activities against him. This was witnessed by Mr. Vitali Bunumarv from the Memorial Center for Rights in Moscow, who was on his part subject to threats against his personal safety as a result of his courageous stand in exposing the games of the Russian Security Bureau and its fabrication of terrorist charges against the Dawah carriers in Russia.

These Stalinist practices of the Kremlin authority expose the reality of the ruling regime’s hostility to Islam and the Muslims. Hizb ut Tahrir pledges to Allah (swt) that it will not relent in its path of proclaiming truth and exposing falsehood. We are positive that Allah (swt) will grant us victory, Allah (swt) willing, despite the Muslim ruler’s complicity and silence on the crimes of the tyrant of Moscow.

The Almighty said:

﴿وَمَا نَقَمُوا مِنْهُمْ إِلَّا أَنْ يُؤْمِنُوا بِاللَّهِ الْعَزِيزِ الْحَمِيدِ

“And they resented them not except because they believed in Allah, the Exalted in Might, the Praiseworthy” [al-Buruj: 8]

The Central Media Office of Hizb ut Tahrir

اتوار، 08 جمادی الثانی ، 1435ھ                          08/04/2014                              نمبر1435 AH/027 :

پریس ریلیز

روس نے حزب التحریر کے ممبر عبدالرحیم توشموتوف کو 17 سال قید کی سزا سنادی

3 اپریل 2014کوانٹرفیکس نیوز ایجنسی نے روس کےفیڈرل سیکورٹی سروس کی میڈیاآفس (ایف ، ایس ،بی)  سے یہ  رپورٹ نقل کی  کہ : "سٹافروبل (Stavropol)شہر کی علاقائی عدالت نے عالمی دہشت گرد تنظیم حزب التحریر  کے ایک رکن کو سزا سنائی جس پر 2013میں مایسکی(Maiskii) کے تہواری تقریبات پر حملوں کی منصوبہ بندی کاالزام تھا۔  عبدالرحیم توشموتوف  کو جوتاجکستان کاباشندہ ہے،  کریمنل لاز کے  جزاول کےآرٹیکل 205 اور30 کے تحت مجرم ثابت کیا گیا (اس پر دہشت گردی اور دہشت گردانہ جرائم کے ارتکاب میں ملوث ہونے،  دہشت گردانہ خیالات یا دہشت گردی کی کاروائیوں میں معاونت فراہم کرنے کاالزام لگایاگیا)۔ اس کو 17 سال قید بامشقت کی سزاسنائی گئی جبکہ 55ہزار روبل مالی جرمانہ اس کے علاوہ ہے "۔

بھائی عبدالرحیم  کے خلاف یہ فیصلہ ہمارے لئے  کوئی حیران کن بات نہیں کیونکہ روسی حکومت عرصہ دراز  سےاسلام اورمسلمانوں کے خلاف کھلم کھلاجنگ لڑرہی ہے،جس میں بھیانک اوروحشیانہ سلوک پرمبنی مختلف طریقوں کو استعمال کیاجاتاہے ۔ ہر کوئی یہ جانتاہے کہ روس میں مکمل طورپر کریملن کا پینل سسٹم پر کنٹرول ہے تو جو بھی قوانین جاری کیے جاتے ہیں وہ کریملن اتھارٹی کے مطالبے پر جاری ہوتے ہیں جو دعوتی سرگرمیوں کودہشت گردی قراردیکرہر اس شخص سے جان چھڑاناچاہتاہے جوکلمہ حق کوبلندکرتاہے۔  2014کے اوائل میں ڈوما(روسی پارلیمنٹ) نے شرمناک قوانین منظور کئے جو ہر قسم کی سیاسی سرگرمی پرنام نہاد دہشت گردی کالیبل لگاکراس کوجرم قراردیتے ہیں ،خواہ یہ سیاسی سرگرمیاں کتنی ہی پر امن کیوں نہ ہوں اور انہی قوانین کے تحت اس قسم کی سرگرمیوں پر 15تا20 سال قید کی سزا دی جاتی ہے۔

روس کے اندر دہشت گردی کاواحدذمہ دارکریملن کی مجرم حکومت ہےاور اس کے  بے شماردلائل ہیں۔ ہمارے بھائی عبدالرحیم کے ساتھ جو کچھ ہوا یہ اس دہشت گردی کی صرف ایک مثال ہے۔  اسے ماسکومیں13ستمبر 2011کو عشاء کی نمازاداکرنے کے بعد مسجد کے باہر پکڑاگیا۔  پھر 29نومبر2011 کواسے ایک سال قید کی سزاسنائی گئی ،صرف اس لئے کہ اس نے مسجد میں کچھ باتیں کیں اورمسلمانوں کوماہ رمضان کی مبارکباد دی ۔   اسی سال  روسی سیکورٹی کے اہلکار وں نے کئی مرتبہ ان کے ساتھ جیل میں  ملاقات کی اوران کے ساتھ تعاون کرنے اوربطورجاسوس  کام کرنے کامطالبہ کیالیکن اُس نے اِس  مطالبے کو سختی سے مسترد کردیا ۔   پھر  جب وہ جیل سے رہاہو ئے تواُن کو16اپریل 2013 کو سٹافروبل شہر میں امیگریشن اورپاسپورٹ  ڈیپارٹمنٹ میں حاضری ہونے کے لئے کہا گیا کہ ان کو کچھ کاغذات دینے ہیں لیکن وہاں انہیں حراست میں لےلیاگیا۔   روسی دہشت گرد مشینری  نےا ُن کے خلاف دہشت گردانہ کاروائیوں کاالزام تراش لیا ۔ اس واقع کے گواہ ماسکو میں حقوق کے میموریل مرکز کے جناب ویتالی بونومارف ہیں جنہیں روسی سیکورٹی بیورو کی غیر قانونی حرکتوں اور دعوت کے حاملین کے خلاف ان کی الزام تراشیوں کو بے نقاب کرنے کے جرات مندانہ کردار کی وجہ سے  دھمکیاں موصول ہوئیں۔

کریملن حکومت کا یہ اسٹالنی طریقہ کار برسراقتدارطبقے  کی اسلام اورمسلم دشمنی کی حقیقت کوبے نقاب  کرتاہے اوریہ کہ حزب التحریر نے اللہ تعالیٰ کے ساتھ یہ عہد کیاہواہے کہ حق کے اظہار اورباطل کوبے نقاب کرنےکے راستے میں اس قسم کے ہتھکنڈوں سے نہیں دبے گی اور اس کے باجود کہ مسلمانوں کے حکمرانوں نے  ماسکو کے سرکش کے جرائم پرخاموشی اختیارکررکھی ہے، ہم یہ یقین رکھتے ہیں کہ اللہ سبحانہ وتعالیٰ ہماری مدد کرے گا   ۔ اللہ تعالی ٰ کاارشاد ہے:

﴿وَمَا نَقَمُوا مِنْهُمْ إِلَّا أَنْ يُؤْمِنُوا بِاللَّهِ الْعَزِيزِ الْحَمِيدِ

"اوروہ ایمان والوں کوصرف اس بات کی سزادے رہے تھے کہ وہ اس اللہ پر ایمان لے آئے تھے جوبڑے اقتدار والا،بہت قابل تعریف ہے" (البروج:8)

حزب التحریرکا مرکزی میڈیا آفس


Today 723 visitors (2647 hits) Alhamdulillah
=> Do you also want a homepage for free? Then click here! <=